ای کوڈ والی چیزیں کھانا؟




Language

Click below for languages:

 

ای کوڈ والی چیزیں کھانا؟

⭕ آج کا سوال نمبر ۳۴۱۲⭕

جس میں حرام جانور کی چربی ملائ گئ ہو اس کے کھانے پینے کی چیزوں میں. ..E…کے ساتھ خاص code number آتے ہیں جو SMS میں بھی چلائے جانے ہیں … ایسی چیزوں کے کھانے کا کیا حکم ہے ؟؟؟

🔵جواب🔵
حامدا و مصلیا و مسلما

شریعت نے جن چیزوں کو حرام قرار دیا ہے اگر اسکی حقیقت و ماہیت یعنی اسکا رنگ خوشبو ذائقہ کسی کیمیائی کیمیکل ڈالنے سے بدل جاے تو اسکا پہلا حکم جو حرام یا مکروہ کا تھا باقی نہیں رہتا
کسی چیز کے وہ خاص اوصاف جن سے اس چیز کی پہچان ہو تی ہے وہی اس چیز کی حیثیت و ماہیت ہوتی ہے

اسلامک فقہ اکیڈمی انڈیا. … کے سامنے اس فن کے ماہرین و خاص جانکاری رکھنے والے کے ذریعے جو تحقیق سامنے آئ ہے اس کے مطابق ( اگر وہ code gelatin ) کے ہیں تو .geletin میں ان حرام جانوروں کی ہڈیوں اور کھالوں کی حقیقت باقی نہیں رہتی جن کے collagen…(ایک قسم کا پروٹین جس سے geletin بنایا جاتا ہے.)
بلکہ وہ ایک نئی حقیقت کے ساتھ ایک نئ چیز ہو جاتی ہے اسلئے اسکے استعمال کی گنجائش ہے
📗نئے مسائل اور فقہ اکیڈمی کے فیصلے. .. صفحہ 182.
14 واں فقہی سمینار حیدرآباد
22 June 2004

اگر code لگی ہوئی چیزوں میں چربی کی چکناہٹ بالکل نہیں ہے تو وہ چیز حلال ہے جیسے بعض کریم بغیر کی بسکٹ کے بارے میں مشہور ہے کہ اس میں خنزیر کی چربی ڈالی گئی ہے اور اسپر اسکا code بھی ہے لیکن اس بسکٹ میں چربی کی زرہ برابر چکناہٹ نہیں تو وہ بسکٹ بالکل حلال ہے اگر اس میں چربی ڈالی بھی گئئ ہو تو prosses. یعنی تبدیلی کی وجہ سے اسکا اثر بالکل باقی نہیں ہے
از احقر….

اگر کوئی کمپنی حرام کھانا بنانے میں مشہور نہ ہو تو محض کسی مخصوص code یا کسی کمپنی کی چیز ہونے کی وجہ سے کسی چیز کو شریعت میں حلال یا حرام قرار نہیں دیا جا سکتا مگر یہ کہ یقین کے ساتھ یہ بات معلوم ہو جائے کہ اس
E code
کے اجزائے ترکیبیہ ..
Ingredients
یعنی ڈالی گئی چیز حرام ہے اور کسی کیمیائی یعنی کیمیکل کی تحقیق کے ذریعے سے اس کی حقیقت و ماہیت کو تبدیل نہیں کیا گیا ہے تو اس چیز سے بچنا لازم ہوگا

جبکہ تقوی کا تقاضا یہ ہے کہ جس چیز کی حلت و حرمت میں شک ہو تو اسے استعمال میں لانے سے بچنا چاہئے
📗 احسن المسائل 6/298

احقر کا تجربہ ⬇
بغیر کریم کی بسکٹ اور کیک میں تو بالکل شک و شبہ نہ کریں
میں نے انڈیا کی
Maggie noodles اور Maggie sous
کا سورت گجرات میں
Laboratory report
کروایا تھا جس پر وہ حرام کہا جانے والا code ہے اور noodles …. کا تو video بھی چلا تھا لیکن انڈیا کے
Maggie noodles and Maggie sous …

کی رپورٹ میں کسی بھی جانور کی چربی نہ ہونا پایا گیا ہے
اس سے پتہ چلا کہ یہ باتیں ڈاکٹروں یا بعض دینی جذبات رکھنے والے غیر مفتی و عالم کی چلائی ہوئی ہے
جس کا شریعت میں اعتبار نہیں ہے.

👈🏻 تبدیلی ماہیت کی مثالیں

حقیقت بدلنے سے ناپاک اور حرام چیز کے حلال ہونے کی چند مثالیں…جو فقہ کی اکثر کتابوں میں ہیں
1…ناپاک چربی سے جب صابن بن جاتا ہے تو اس کی حقیقت بدل گئی اسلئے پاک ہے
📗 فتاوی محمودیہ جدید 18/206 بحوالہ شامی

2…گوبر اور پاخانہ جل کر راکھ ہو جائے تو پاک ہے
3…گدھا نمک کی کان میں گر کر مر کر نمک بن جائے تو وہ نمک پاک اور حلال ہے
.
.
4…حرام جانور کی کهال کو کیمیکل نمک کے ذریعے اس کی چکناہٹ ختم کر دی جائے تو اس کهال سے بنے لباس میں نماز جائز ہے
5…شراب میں نمک یا کسی چیز کے ڈالنے سے وہ سرکہ بن جائے تو وہ پاک ہے
📗 مستفاد از مالابدمنہ 21

واللہ اعلم بالصواب

✍🏻 مفتی عمران اسماعیل میمن حنفی چشتی

🕌 استاذ دار العلوم رام پورا سورت گجرات ھند