قربانی میں حرام کمائی والے کے ساتھ حصہ؟

قربانی میں حرام کمائی والے کے ساتھ حصہ؟

⭕آج کا سوال نمبر ۳۲۳۷⭕

بڑے جانور میں سات حصے ہوتے ہیں ان سات لوگوں میں سے کسی ایک کا پیسہ حرام کمائی سے ہو تو باقی کے چھ لوگوں کی قربانی صحیح ہوگی؟

🔵جواب🔵

حامدا و مصلیا و مسلما

: اگر صریح مال حرام ہے، تو اُس میں مالک کی ملکیت نہیں ہوتی، جیسے: سود قمار وغیرہ، تو ایسے متعین پیسے سے قربانی میں شرکت کرنے سے کسی کی بھی قربانی درست نہ ہوگی،

احسن الفتاویٰ کے مسئلہ کا محمل یہی صورت ہے؛ لیکن اگر قطعی حرام پیسے نہیں ہیں؛ بلکہ مکروہ ہیں جس میں مالک کی ملکیت شرعی طور پر پائی جاتی ہے، تو ایسی صورت میں قربانی درست ہوجائے گی۔

📘مستفاد: احسن الفتاویٰ ۷؍۵۰۳

مفتی سلمان منصورپوری صاحب دام ظلہ اور دیگر بعض مفتی حضرات کی رای یہ ہے کہ اس صورت میں بھی سب کی قربانی درست ہو جائیگی

📘 کتاب النوازل ۲۲/۳۳۴ تا ۳۳۶ سے ماخوذ

واللہ اعلم بالصواب

✍🏻 مفتی عمران اسماعیل میمن حنفی

🕌 استاذ دار العلوم رام پورہ سورت گجرات ہند