قربانی کے جانور کی عمر و پہچان؟

قربانی کے جانور کی عمر و پہچان؟

⭕آج کا سوال نمبر ٣٢٣٠⭕

کون سے جانور کی کتنی عمر قربانی کے لئے ضروری ہے اور عمر مکمل ہونے کی کیا علامت ہے اور دانت گر گئے ہو یا دانت ہی نہ آئے تو اس کی قربانی درست ہے؟

🔵جواب🔵

حامدا مصلیا و مسلما

قربانی کا جانور بکرا بکری مینڈھا مینڈھی ہے تو ایک سال، گائے بھینس پاڑا ہو تو دو سال اور اونٹ ہے تو پانچ سال مکمل ہونا ضروری ہے، البتہ دنبہ اور مینڈھا چھ مہینے کا ہو ایک سال کے مینڈھوں کے درمیان چھوڑ دیا جائے تو دیکھنے میں اس کی ہائٹ اور موٹاپے کی وجہ سے ایک سال کا معلوم ہوتا ہو تو اس کی قربانی درست ہے۔

جانور قربانی کے لائق ہیں یا نہیں اس کی پہچان دانت سے ہوتی ہے اگر بکرے میں نیچے کے دو دانت ہے ایک سال کا یقینی ہیں کیونکہ عام طور میں سوا سال میں دانت آتے ہیں اور بڑے جانور میں نیچے درمیان کے دو دانت دوسرے دانتوں کے مقابلے میں بالکل نمایاں-الگ ہوتے ہیں اس طور پر کہ وہ اوپر سے تھوڑے ٹیڑھے یا دوسروں سے چوڑے اور پیلے ٹڑھے ہوتے ہیں عام طور پر سوا دو سال میں آتے ہیں اور دودھ کے دانت سب ایک جیسے اور بلکل سفید ہوتے ہیں، لیکن اگر کسی جانور کے پککے دانت نہ آئے ہو لیکن یقینی طور پر اس کی عمر قربانی کے لائق ہونا علم ہو تو اس کی قربانی درست ہے۔

📘فتاویٰ رحیمیہ

📕عالمگیری ۵/۱۱۴

نوٹ:- آج کل صرف دانت دیکھ کر بڑے جانور خرید لیے جاتے ہیں، دودھ کے دانت تو ہر جانور میں ہوتے ہیں، پکّے دانت کی پہچان ضروری ہے۔
اس کے لئے دانتوں کی ایمیج بھیجی جا رہی ہے

واللہ اعلم بالصواب

✍🏻 مفتی عمران اسماعیل میمن حنفی

🕌 استاذ دار العلوم رام پورہ سورت گجرات ہند